شریک ہوں اور تازہ ترین معلومات حاصل کریں

جاں نثاراختر

  • غزل


لوگ کہتے ہیں کہ تو اب بھی خفا ہے مجھ سے


لوگ کہتے ہیں کہ تو اب بھی خفا ہے مجھ سے
تیری آنکھوں نے تو کچھ اور کہا ہے مجھ سے

ہائے اس وقت کو کوسوں کہ دعا دوں یارو
جس نے ہر درد مرا چھین لیا ہے مجھ سے

دل کا یہ حال کہ دھڑکے ہی چلا جاتا ہے
ایسا لگتا ہے کوئی جرم ہوا ہے مجھ سے

کھو گیا آج کہاں رزق کا دینے والا
کوئی روٹی جو کھڑا مانگ رہا ہے مجھ سے

اب مرے قتل کی تدبیر تو کرنی ہوگی
کون سا راز ہے تیرا جو چھپا ہے مجھ سے

ویڈیو
This video is playing from YouTube Videos
This video is playing from YouTube نعمان شوق RECITATIONS نعمان شوق



00:00/00:00 لوگ کہتے ہیں کہ تو اب بھی خفا ہے مجھ سے نعمان شوق

Leave a comment

+