شریک ہوں اور تازہ ترین معلومات حاصل کریں

دیپک جین دیپ

  • غزل


تیرے در تک آؤں میں


تیرے در تک آؤں میں
آئینہ ہو جاؤں میں

منزل اپنی ڈھونڈے وہ
اور رستہ ہو جاؤں میں

اس کا کوئی ذکر نا ہو
اور رسوا ہو جاؤں میں

سب کے دعوے واجب ہیں
کس کے حصے آؤں میں

تنہائی کو ساتھ لئے
بھیڑ نہیں ہو جاؤں میں


Leave a comment

+