شریک ہوں اور تازہ ترین معلومات حاصل کریں

بشیر بدر

  • غزل


کون آیا راستے آئینہ خانے ہو گئے


کون آیا راستے آئینہ خانے ہو گئے
رات روشن ہو گئی دن بھی سہانے ہو گئے

کیوں حویلی کے اجڑنے کا مجھے افسوس ہو
سیکڑوں بے گھر پرندوں کے ٹھکانے ہو گئے

جاؤ ان کمروں کے آئینے اٹھا کر پھینک دو
بے ادب یہ کہہ رہے ہیں ہم پرانے ہو گئے

یہ بھی ممکن ہے کہ میں نے اس کو پہچانا نہ ہو
اب اسے دیکھے ہوئے کتنے زمانے ہو گئے

پلکوں پر یہ آنسو پیار کی توہین تھے
آنکھوں سے گرے موتی کے دانے ہو گئے

ویڈیو
This video is playing from YouTube Videos
This video is playing from YouTube جگجیت سنگھ RECITATIONS جگجیت سنگھ



00:00/00:00 کون آیا راستے آئینہ خانے ہو گئے جگجیت سنگھ

Leave a comment

+